) کروڑوں روپے سے اپ گریڈ تحصیل ہسپتال پیرمحل میں آپریشن تھیٹر بند

پیرمحل ( نمائندہ سچ کاساتھ ) کروڑوں روپے سے اپ گریڈ تحصیل ہسپتال پیرمحل میں آپریشن تھیٹر بند مریضوں کے لیے بنائے گئے وارڈوں میں ہو کا عالم معمولی نوعیت کے مریضوں کا علاج معالجہ کرنے کی بجائے ڈسٹرکٹ ہسپتال ٹوبہ میں ریفر کرنے کے باعث پنجاب حکومت کے علاج معالجہ کے دعوے ہوا میں اڑادیے تفصیل کے مطابق تحصیل ہسپتال پیرمحل جس کو ایک کروڑ 31لاکھ روپے کی خطیر رقم سے اپ گریڈ کرنے کے لیے رقم خرچ کی گئی

حکومت کی طرف سے ہسپتال میں تین ایم ایم بی ایس ڈاکٹر دو ایل ایچ وی سمیت چھ سٹاف نرسیں اور کثیر تعدا د میں عملہ تعینات کیا گیا زبانی علاج معالجہ کی سہولت کے سوا ہسپتال میں علاج معالجہ کی کوئی سہولت نہیں آپریشن تھیٹر کا سلسلہ شروع ہی نہیں کیا گیا جبکہ مریضوں کے لیے موجود بیڈ خالی پڑے خراب ہورہے ہیں مریضوں کو ہسپتال میں داخل کرنے کی بجائے فی الفور معمولی طبی امداد دے کر ڈسٹرکٹ ہسپتال ٹوبہ ٹیک سنگھ ریفر کرنے کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث اکثر مریض خون ضائع ہونے کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں

ڈسپنسرز کی کمی کے باعث سٹاف نرسیں مریضوں کو ہاتھ لگانے کی بجائے خاکروبوں اور وارڈن سے مرہم پٹی کروانے پر اکتفا کررہی ہیں ایک کروڑ 31لاکھ روپے کی اپ گریڈنگ کے باوجود بجٹ کی کمی کابہانہ بناکر آپریشن تھیٹر بند ہوچکاہے جس کے قیمتی آلات استعمال نہ ہونے کے باعث زنگ آلود ہوکر ناکارہ ہورہے ہے چند سال قبل ایم او ڈاکٹر محمد اعظم اطہرمرحوم نے اپنی مدد آپ کے تحت آپریشن تھیٹر کو مخیر حضرات کی مد د سے فعال کیا تھا مگر اس وقت کے ایس ایم او کی مداخلت سے انہیں آپریشن کا سلسلہ بند کرنا پڑا

جو آج تک بحال نہ ہوسکا وسیع تر بلڈنگ اور سازوسامان موجود ہونے کے باوجود آپریشن کی سرکاری طور پرسہولت خواب بن گئی سماجی فلاحی تنظیموںنے وزیر اعلٰی پنجاب ، گورنر پنجاب ،صوبائی وزیر صحت ڈپٹی کمشنرٹوبہ ٹیک سنگھ ، سے مطالبہ کیا کہ تحصیل ہسپتال پیرمحل میں عملی طور پر کام کرنے والے ڈاکٹر ز تعینات کرکے مقامی سطح پر ڈلیوری ، اپنڈکس اور دیگر آپریشن کی سہولتیں فراہم کی جائیں تاکہ پنجاب حکومت کاصحت کی سہولیات عوام کے لیے کے نعرہ کوعملی جامہ پہنایا جاسکے

اپنا تبصرہ بھیجیں