برازیل

پولیس والوں نے چور کی 18ویں سالگرہ تھانے میں جبراً منائی

برازیل کی ریاست ریو گراندے دو نورتے میں پولیس نے ایک نوجوان چور کو اس کی اٹھارویں سالگرہ والے دن گرفتار کیا اور اسے شرمندہ کرنے کےلیے تھانے میں اس کی 18ویں سالگرہ زبردستی منائی یہی نہیں بلکہ سالگرہ کی اس جبری تقریب میں چور کی والدہ کو بھی بلایا گیا اور اس دوران پولیس والے اس لڑکے پر جملے بھی کستے رہے خبروں کے مطابق، ریو گراندے دو نورتے میں مقامی پولیس نے گاڑیوں کے ٹیپ ریکارڈرز اور دوسرا چھوٹا موٹا سامان چرانے والے نوجوان کو سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے جس دن گرفتار کیا

تو معلوم ہوا کہ وہی دن اس کی 18ویں سالگرہ بھی ہے چور کو گرفتار کرکے تھانے لے جایا گیا جہاں اس کی والدہ کو بھی بلوا لیا گیا۔ اس کے بعد تھانے میں ہی اس نوجوان چور کی 18ویں سالگرہ منائی گئی اس سے زبردستی کیک کٹوایا گیا اور اسے کولڈ ڈرنک بھی پلائی گئی۔ اس دوران پولیس والے ہیپی برتھ ڈے ٹو یو گانے کے ساتھ ساتھ نوجوان پر جملے بھی کستے رہے اور اسے شرمندہ کرتے رہے۔

کیک کا ایک ٹکڑا اس نوجوان کو اور دوسرا اس کی والدہ کو زبردستی کھلایا گیا یہی نہیں بلکہ جبری سالگرہ کی یہ تقریب فلمائی بھی گئی اور اس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر ڈال دی گئی جو وائرل ہوگئی ویڈیو میں نوجوان کے چہرے پر شرمندگی اور بے بسی کے آثار دیکھے جاسکتے ہیں لیکن پھر بھی وہ پولیس والوں کے حکم کی تعمیل کرنے پر مجبور ہے۔

سوشل میڈیا پر یہ ویڈیو وائرل ہوگئی اور دنیا بھر سے لوگوں نے اس پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا دورانِ حراست کسی فرد سے پولیس کا یہ سلوک عوامی اکثریت نے ناقابلِ قبول اور ناقابلِ برداشت قرار دیتے ہوئے متعلقہ اداروں سے سخت محکمانہ کارروائی کا مطالبہ بھی کیا جلد ہی اس ویڈیو کے بارے میں برازیل کی ملٹری پولیس کو بھی خبر ہوگئی جس نے فوری طور پر ایک بیان میں کہا کہ جن پولیس والوں نے بھی یہ شرمناک حرکت کی ہے، ان کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائے گی۔

کئی سوشل میڈیا صارفین نے پولیس کے اس طرزِ عمل کو بے رحمانہ کہتے ہوئے کہا کہ پولیس اہلکار اس بات کی خوشی منا رہے تھے کہ انہوں نے ایک چور کو ٹھیک اس دن گرفتار کیا ہے کہ جب وہ بالغ ہوچکا ہے اور اب اسے زیادہ سخت سزا کا سامنا کرنا پڑے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں