پیرمحل؛ پیدائش ‘وفات ‘شادی اور طلاق کا فیلڈ آفس،میونسپل کمیٹی میں لیٹ اندراج سائلین کے لیے درد سر بن گیا

پیرمحل؛ پیدائش ‘وفات ‘شادی اور طلاق کا فیلڈ آفس،میونسپل کمیٹی میں لیٹ اندراج سائلین کے لیے درد سر بن گیا چکوک اور شہروں کے مکین اپنے بچوں کی پیدائش کے اندراج کے لیے پیچیدہ مراحل طے کرنے پر مجبور ،، چکوک کے چوکیداروں کے بغیر تنخواہ کے انجام دینے والے کام محکمہ لوکل گورنمنٹ کے سپر دکرنے سے عوام سخت مسائل کا شکار لیٹ اندراج وفات اور پیدائش کو آسان بنایاجائے سماجی فلاحی حلقوں کا مطالبہ تفصیل کے مطابق سکولوں میں بچوں کے داخلہ اور امتحانات کے لیے ب فارم کی شرط عائد ہونے کے بعد لاعلم والدین اپنے بچوں کی تاریخ پیدائش کے اندراج کے لیے یونین کونسلوں میں رجوع کرتے ہیں جہاں پر انہیں مکمل آگاہی نہ ہونے اور چکوک کے چوکیدارجن کا کام تاریخ پیدائش وفات ریکارڈ مرتب کرنا اور گائوں میں پہرہ دینا ہوتا تھا کے ریکارڈ کو ،، نسل درنسل منتقل نہ ہونے اور قیمتی ریکارڈ کی دیکھ بھال نہ ہونے کے باعث ضائع ہونے کے باعث سخت دشواریوں کاسامنا ہے والدین اپنے بچوں کی پیدائش کا لیٹ اندراج کروانا چاہتے ہیں جن کو پیچیدہ اور مشکل ترین پراسس سے گذار اجاتا ہے بعض ناخواندہ والدین تکلیف دہ مشکل پراسس مکمل نہ کرسکنے کے باعث اپنے بچوں کو سکول کی پڑھائی سے ہٹاکر اپنے گھر بٹھالیتے ہیں اس طرح نہ صرف تعلیمی نقصان ہورہا ہے بلکہ 1961سے موجودریکارڈ دستیاب نہ ہونے کے باعث سائلین کو پیدائش ‘وفات ‘شادی اور طلاق کا متعلقہ یونین کونسل میں لیٹ اندراج سخت مشکلات پیدا کررہا ہے سماجی فلاحی حلقوں نے ڈپٹی کمشنر ٹوبہ ٹیک سنگھ سے مطالبہ کیا ہے کہ پیدائش ‘وفات ‘شادی اور طلاق کا متعلقہ یونین کونسل میں لیٹ اندراج کو آسان بنایاجائے تاکہ لوگوںکو زندگی میں پیش آنیوالی متعدد مشکلات سے بچایا جاسکے فیلڈ افسران کا کہنا ہے حکومت پنجاب کی ہدایات کے مطابق اندراج کررہے ہیں ہم حکومتی ہدایات کے مطابق کام کرنے پرمجبور ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں